بی او کےآسان اکاؤنٹ

آسان اکاؤنٹ کم آمدنی والے عام افراد کےلیے بنایا گیا ہے جن کی رقوم عموماً بینکنگ کے عمل سے باہر ہوتی ہیں ۔ یہ وہ لوگ ہیں جنہیں عام بینک اکاؤنٹ کھولنے میں مشکلات کا سامنا ہوتا ہے۔ ان افراد میں تربیت یافتہ/ غیر تربیت یافتہ ہنر مند، کاشت کار، کم یا غیر تعلیم یافتہ افراد، مزدورپیشہ افراد، گھریلو خواتین ، اپنا کاروبار چلانے والے افراد،    پینشنر ،  طلباء ،  زکوۃٰ  مستحقین،  بیوہ ، مساکین ،  امداد پر گزارا کرنے والے افراد  وغیرہ شامل ہو سکتے ہیں ۔ اس اکاؤنٹ کو کھولنے کے لیے ایک الگ فارم استعمال ہوگا جس پر"آسان کرنٹ اکاؤنٹ اجراء" درج ہوگا۔

اکاؤنٹ کھولنے کی شرائط:

  • پہلے سے موجود بنیادی بینکنگ اکاؤنٹ(BBA)کو صارف کی مرضی سے آسان کرنٹ اکاؤنٹ میں تبدیل کیا جا سکتا ہے جس کی تمام شرائط سے صارف کو آگاہ کر دیا جائے گا۔ BBA کی آسان کرنٹ اکاؤنٹ میں منتقلی پر کوئی اخراجات نہیں ہوں گے۔ اس مقصد کے لیے تحریری ضمانت پر صارف کے دستخط کروائے جائیں گے۔ ان دستخطوں کو بینک میں موجود نمونہ دستخط کارڈ سے ملا کر تصدیق کی جائے گی۔
  • یہ اکاؤنٹ نادرا سے تصدیق ہونے کے بعد کھولا جائے گا۔
  • ایک کمپیوٹرائزڈ شناختی کارڈ کا حامل شخص صرف ایک آسان کرنٹ اکاؤنٹ (انفرادی یا مشترکہ) کھول سکتا ہے۔
  •  آسان اکاؤنٹ صرف ایک فرد/ شخص کھو ل سکتا ہے(انفرادی یا مشترکہ )
  •  یہ اکاؤنٹ صرف پاکستانی روپے میں کھولا جائے گا۔
  •  آسان اکاؤنٹ کے تحت کرنٹ یا بچت دونوں طرح کے اکاؤنٹ کھولے جا سکتے ہیں ۔
  •  حتیٰ الوصع، صارف کو ATM کارڈ جاری کیا جائے گا۔ چیک بک بھی جاری کی جائے گی جسے صارف ذاتی طور پر بینک سے وصول کرے گا۔
  •  اکاؤنٹ کھولتے وقت ATM  کارڈ اور چیک کے اجراء کےلیے ایک درخواست کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ ان کا اجراء آسان اکاؤنٹ کھولنے کے فارم پر موجود خانوں کو بھرنے سے بھی کیا جا سکتا ہے۔ البتہ اسی روز ATM ڈیپارٹمنٹ کو بذریعہ ای میل اور چیک بک کی درخواست بذریعہ پورٹل بھجوانا لازمی ہے۔
  •  چیک بک کا اجراء نادرا ویری سس اور بائیو میٹرک تصدیق کے بعد ہی کیا جائے گا۔
  •  یہ کم خطرے والے(Low Risk)اکاؤنٹ ہیں ۔
  •  آسان اکاؤنٹ کو کم از کم 100روپے کی رقم سے کھولنا ضروری ہے۔ البتہ 1۔زکوۃٰ، 2۔طلباء،3سرکاری / نیم سرکاری اداروں سے تنخواہ /پنشن / امداد حاصل کرنے والے افراد بشمول بیوہ ، مرحوم ملازمین کےبچے یا دیگر ایسے افراد ، کم از کم رقم کی شرط سے مثتثنیٰ ہیں ۔
  •  کم از کم رقم رکھنےکی شرط یا سروس چارجز وغیر آسان اکاؤنٹ پر لاگو نہیں ہیں ۔
  •  آسان اکاؤنٹ کو بند کرنے پر کوئی اخراجات وصول نہیں کئے جائیں گے۔
  •  اگر کلوزنگ بیلنس-/10،000روپے یا اس سے زیادہ ہو تو اکاؤنٹ کی تفصیل (اسٹیٹمنٹ) سال میں دو مرتبہ ماہِ جنوری اور جولائی میں مہیاء کی جائے گی۔ بصورت دیگر سال میں ایک مرتبہ مہیاء کی جائے گی۔
  •  یہ اکاؤنٹ کاروباری مقاصد کے لیے نہیں کھولا جائے گا۔
  •  تمام رقوم بینک کی شاخ میں جمع کروائی جائیں گی۔
  • موجودہ ریگولر اکاؤنٹ کا صارف آسان اکاؤنٹ کھولنے کا اہل نہیں ہے۔
  • ملک  سے باہر رہائش پذیر افراد یا غیر ملکی شہری آسان اکاؤنٹ کھولنے کے  اہل نہیں ہیں ۔
  • بینک کی شاخیں پنشن بک/پاسپورٹ کی بنیاد پر بھی آسان اکاؤنٹ کھول سکتی ہیں مگر پہلے پنشن بک/پاسپورٹ کی نادراسے تصدیق ضروری ہے۔
  • آسان اکاؤنٹ ملک  سے باہر رہائش پذیر شخص یا غیر ملکی شہری کے ساتھ اشتراک میں نہیں کھولا جاسکتا۔
  •  آسان اکاؤنٹ کسی ایسے شخص کے ساتھ اشتراک میں نہیں کھول جاسکتا جو پہلے سے ریگولر اکاؤنٹ ہولڈر ہو۔
  •  آسان بینک اکاؤنٹ کا صارف دوسرا آسان اکاؤنٹ یا ریگولر اکاؤنٹ کھولنے کا اہل نہیں ہے۔
  •  سیاسی طور پر شہرت یافتہ افراد(PEP)آسان اکاؤنٹ کھولنے کے اہل نہیں ۔
  •  U Bank Plusمیں آسان اکاؤنٹ کےلیے لفظ “Asaan Account”کا اضافہ کیا جائے گا۔
  • ماسوائے بین الاقوامی سطح پر قابل قبول اے ٹی ایم کارڈ کے ، آسان بینک کے ذریعے بیرون ملک رقوم کی ترسیل نہیں کی جاسکتی۔
  • مدتی ڈیپازٹ کی رسید/ربا سے پاک سرٹیفکیٹ کا آسان اکاؤنٹ کےلیے اجراء ممکن ہے مگر اکاؤنٹ میں موجود رقم کا شمار TDRبیلنس اور اکاؤنٹ بیلنس کوجمع کر کے کیا جائے گا۔
  • دو افراد کو مشترکہ طور پر آسان اکاؤنٹ کھولنے کی سہولت ہے۔ اگر درخواست گزار وں کی تعداد زیادہ ہوتو متعلقہ بینک کی شاخ اضافی آسان اکاؤنٹ فارم استعمال کر سکتی ہے۔ آسان اکاؤنٹ صرف بینک کی حدود سے باہر کھولا جائے گا اور اسے بینک کا مستقل عمل بھی کھولے گا۔
  • بینک منیجر عملے کے ارکان مختص کرے گا جو صارفین کے گھروں میں جا کر آسان اکاؤنٹ کھولنے کے مجاز ہوں گے۔ یہ خدمات ان بینک ارکان کے ریکارڈ میں درج کی جائیں گی۔
  • مختص شدہ بینک ملازمین کو کسمٹر وزٹ رپورٹ پر تمام اندراج کر کے دستخط کرنا ہوں گے۔
  •  اکاؤنٹ کی تصدیق کےلیے برانچ منیجر، منیجرآپریشن یا اکاؤنٹ اوپننگ افسر، صارف سے بذریعہ ٹیلیفون رابطہ کر کے کسٹمر وزٹ رپورٹ کے اندراجات کی تصدیق کر سکتا ہے۔

ماہانہ حد:

  • ماہانہ رقم نکلوانے کی حد:-/500،000روپے
  •  ماہانہ رقم جمع کروانے کی حد (ماہانہ کلوزنگ کے روز)  -/500،000روپے (رقم+  TDR/RFC)
  • اگر ان ماہانہ حدود پر عمل نہ کیا گیا تو اکاؤنٹ کو "ڈیبٹ بلاک" قرار دے دیا جائے گا، تاہم  پھر بھی اکاؤنٹ میں رقوم جمع کروائی جا سکیں گی۔
  • اگر بیرون ملک رقوم کی آمد کے باعث آسان/ اکاؤنٹ میں رقم کی حد مجوزہ حد -/500,000روپے سے بڑھ جائے تو ضروری جانچ پڑتال اور رسک ریولیو یشن کے بعد متلقہ شاخ کمپلائنس ڈویژن سے منظوری حاصل کر ے گی اور ایسی تمام رقوم کا ریکارڈ رکھتے ہوئے اکاؤنٹ کی نوعیت (Status) تبدیل نہیں کرے گی۔ مزید براں، اگر ایسے صارفین کی پہچان سے متعلق رپورٹ (KYC)سٹیٹس بریچ (Status Breach) کی نشان دہی کرے تو اس اکاؤنٹ کی بنیادی حد میں کمپلائنس ڈویژن کی منظوری میں فی الوقت اضافہ کر دیا جائے گا اور بعد میں یہ اضافہ واپس لے لیا جائے گا۔
  • -/500،000کی حد صرف صارف کے لیے ہے بینک کے اندرونی ٹرانسپکشن پر یہ پابندی لاگو نہیں ہوگی، نہ ہی اس پر کسی قسم کے اخراجات لاگو ہوں گے۔
  •  بینک اخراجات، حکومتی ٹیکس، کٹوتیاں یا عدالتی احکامات پر -/500,000کی ماہانہ حد کی پابندی لاگو نہیں ہوگی۔
  • موجودہ  U Bank پلس کا نظام اندرون/ بیرون آمد کے چیک کو صارف کے کھاتے میں ڈیبٹ اور کریڈٹ دونوں حصوں میں ظاہرکرتا ہے۔  اس رقم کو کریڈٹ بیلنس کی حد اور ڈیبٹ ٹرانزیکشن کی حد سے اس مہینے کے لیے باہر رکھا جائے گا۔
  •  ڈیپازٹ سلپ پر صارف کا فون نمبر درج کرنا ضروری ہے تا کہ بضرورت صارف سے رابطہ کیا جا سکے۔
  • ڈیپازٹ سلپ کی بینک اور صارف کی کاپیوں پر سیریل نمبر یکساں ہونا چاہئے۔
  •  ڈیپازٹ سلپ کی بینک اور صارف کی کاپیوں پر تمام تفصیلات یکساں ہونی چاہیں ۔

شیڈول چارجز کا اطلاق:

بینک کے شیڈول چارجز میں ٪50 رعایت دی جائے گی۔

خبریں

بی او کے برانچز پر پرائز بانڈز کی اینکیشمنٹ

بینک آف خیبر نے اپنی 15 روایتی شاخیں (مندرجہ ذیل فہرست) کو نامزد کیا ہے تاکہ اس کے کسٹمرز کو انعامات کی رقم اور نیشنل پرائز بانڈ کی ادائیگی کے لئے خدمات فراہم کی جا سکیں۔ انعام کے...

بینک آف خیبر نے پشاورمیں اپنے ہیڈ آفس سے ڈے کیئر سنٹر کا آغاز کر دیا ہے.

خیبر پختونخواہ کے پہلے ہیڈکوارٹر میں بینک آف خیبر کے ملازمین کے لئےڈے کیئر انسٹیٹیوٹ بن گیا ہے.. بچے کی دیکھ بھال طویل عرصے سے کام کرنے والے والدین کے لئے ایک اہم مسئلہ ہے اور یہ...

مقام